معاشرے میں معذور افراد کی اہمیت

معاشرے میں معذور افراد کی اہمیت
معاشرہ انسان کو انسانیت کا درس دیتا ہے۔اس معاشرے میں ہر قسم کے لوگ آباد ہوتے ہیں ۔ ہر ایک کے رہنے کا انداز جدا جدا ہوتا ہے۔ معاشرے میں رہنے والے افراد آپس میں محبت کا برتاؤ رکھتے ہیں۔ خوش اخلاقی ان کے اندر انسانیت کو جگا دیتی ہے۔معاشرے میں جو مقام انسان کے ایک دوسرے کی مدد کرنے سے ملتا ہے اسکی مثال کہیں بھی نہیں ملتی۔معاشرے میں سارے افراد ایک جیسے بھی نہیں ہوتے۔
معاشرے کے اندر رہنے والے ایسے انسان بھی بستے ہیں۔جن کی زندگیاں ایک صحت مند افراد سے مختلف ہوتی ہے۔وہ اپنی زندگی میں جو بہت سے حالات سے لڑرہے ہوتے ہیں ۔معاشرے میں ان کا اپنا مقام ہوتا ہے۔یہ طبقہ معذور افراد پر مشتمل ہوتا ہے۔ جن میں ہر معذورافرادکی زندگی دوسرے معذور افراد کی زندگی سے بہت الگ ہوتی ہے۔ان کا رہنا ،ان کا بولنا اور ان کا چلنا بہت مختلف ہے۔ہر معذور افراد کی معذوری بہت مختلف ہوتی ہے۔معاشرے میں ان کے ساتھ بہت زیادتیاں کی جاتی ہیں ۔ان کے حق کو دبا دیا جاتا ہے۔ان کو ہر ایک چیز سے محروم کر دیا جاتاہے۔جو ان کا اپنا حق ہوتا ہے ۔ اس کو پوری طرح سے سر انجام نہیں دیا جاتا۔اللہ تعالیٰ نے ان کے اندر اتنی ہمت،قوت،لگن اور جذبہ رکھا ہے کہ کوئی ان کا مقابلہ نہیں کر سکتا۔دنیا کے کسی میدان میں چلے جائیں آپ کو معذوروں کی ہمت،لگن اور جذبے کی مثالیں بنتی دیکھائی دیں گی۔معذور افراد ہر میدان میں اپنی کامیابی کے قلعے گاڑھ رہا ہے۔
معاشرے میں بعض ایسے ا فراد کا گروہ رہتا ہے جن کو معذور افراد سے نفرت آتی ہے۔یہ گروہ اپنے آپ کو دنیا کے ان مغرور افراد میں شامل کرتے ہیں جن کا نام لینا دنیا گوارہ نہیں کرتی۔تکلیف تو اسے ہوتی ہے ۔جن کے ہاں احساس اور رحمدلی پائی جاتی ہے۔یہ مغرور افراد نفرت بھری زندگی گزار کر چلے جاتے ہیں۔معاشرے میں زندگی گزارنی ہے ۔تو ایک دوسرے کا سہارا بن کے جیو۔آخر ایک دن جانا تو ہے۔ہمیں دنیا میں بغض اور نفرت کو مٹا کر ایک ایسی مثال قائم کریں کہ ہر ایک کو دوسرے کو اپنا سمجھ کر اس کی مدد کریں۔زندگی کا کوئی پتا نہیں کون کب چلا جائے۔
معاشرے میں معذور افراد کو بہت سی مشکلات درپیش ہوتی ہیں۔وہ بڑی بیدردی سے مشکلات سہہ رہا ہوتا ہے۔معذور افراد کوآنے جانے میں بہت مشکل ہوتی ہے۔پر یہ اپنی ہمت نہیں ہارتے۔ہر کام میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔دنیا میں ان کی مثالیں زندہ ہیں۔غرور اور تکبر کو مٹا کر یہ معذور افراد دنیا کے ہر کونے میں ایک دوسرے کا ساتھ دے رہے ہیں۔ان کی معذوری چاہے جیسی بھی ہو۔یہ ایک دوسرے کا ساتھ نہیں چھوڑتے۔
معاشرے کے اندر ایسے افراد بھی زندگی گزار رہے ہیں۔جو دوسروں کا سہارا بن کر جی رہے ہیں۔وہ لوگ معذوروں کی خدمت کر کے دلی سکون حاصل کرتے ہیں۔دن رات ان کی خاطر داری کر کے اپنا مقام معاشرے میں پیدا کرتے ہیں۔معذوروں کو ہر سہولیات سے آراستہ کرتے ہیں۔تعلیم کے میدان میں ،علاج اور حاتکہ شادی کا خرچ بھی اٹھاتے ہیں۔اللہ تعالیٰ ان لوگوں کو انسانیت کی خدمت کرنے کا ذریعہ بنا دیتا ہے۔یہ معذور افراد کے لیے ایک انمول تحفہ ہوتے ہیں۔جن کو بھولا نہیں جا سکتا۔ان کی محبت دلوں میں گھر کر جاتی ہے۔ہمیں ایسے افراد کی قدر اور ان کے مقام کی عزت اور ان کے احسان کو ہمیشہ یاد رکھنا چاہیے۔
معاشرے میں ہمیں معذورافراد کو ان کا مقام دینا چاہیے۔ان کو وہ ہر سہولیات سے آراستہ کریں جن کی ان کو ضرورت ہے۔اللہ تعالیٰ ہم سب کو اکٹھا چلنے اور ایک دوسرے کے کام آنے کی توفیق دے۔آمین

Facebook Comments