عدالت سے بچنے کیلئے عمران خان نے بھی نوازشریف والا کام کردیا، ایک ہی کمپنی سے دونوں نے مدد مانگ لی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) پاناماپیپرزکیس کے پس منظر میں دونوں سیاسی حریفوں وزیراعظم نوازشریف اور تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ایک ہی ٹیکس سے متعلق ایک ہی آڈٹ فرم کی خدمات حاصل کرلی ہیں اوران سے مشاورت کی ۔
پانامالیکس میں وزیراعظم کے بچوں کی آف شور کمپنیاں سامنے آنے کے بعد سپریم کورٹ کا پانچ رکنی بینچ کیس کی سماعت کررہاہے جہاں کئی درخواست گزاروں نے وزیراعظم کی نااہلی کی استدعا کی جبکہ مسلم لیگ ن کے حنیف عباسی نے اپنی درخواست میں عمران خان کو نااہل قراردینے کی استدعا کی ۔
ایکسپریس ٹربیون کے مطابق اکاﺅنٹنسی فرم ’اے ایف فرگوسن ‘ نے پہلے پہل ٹیکس کے نازک معاملات پر وزیراعظم نوازشریف کی مدد کی اور اب عمران خان کو ٹیکس اور اکاﺅنٹسی کے معاملے پر مشورہ دیدیا،یہ انکشاف عمران خان اور کمپنی کے درمیان رابطے میں رہنے والے ایک ذریعہ نے کیا، دونوں مقدمات مختلف ہیں لیکن ان کی جڑیں پاناما پیپرز میں ہی ہیں۔
حنیف عباسی کی درخواست پر عمران خان کے وکیل نعیم بخاری نے 29نومبر کو اپنا جواب جمع کرایاتھااور اسی کمپنی نے مسلم لیگ ن کے رہنماءکی طرف سے اٹھائے گئے سوالات پر اپنی خدمات دی تھیں ، اس صورتحال میں پیشہ وارانہ معاملات کا سوال اٹھتاہے کیونکہ اسی کمپنی نے دوسرے مقدمے میں وزیراعظم نوازشریف کو بھی اپنی خدمات فراہم کیں۔
رپورٹ کے مطابق اے ایف فرگوسن کے سینئر پارٹنر نے بتایاکہ کمپنی عمران خان کو ہدایات نہیں دے رہی تھی ، عمران خان نے ملک کا تیسرا امیرترین شخص ہونے کے باوجود وزیراعظم پر ٹیکس چوری کا الزام لگایا، لوگ کمپنی سے رابطہ کرکے ان سے مشاورت کرتے ہیں ، پی ٹی آئی نے بھی ٹیکس معاملات پر رابطہ کیا لیکن ہم نے خدمات فراہم کرنے سے انکار کردیاکیونکہ اے ایف فرگوسن سیاسی مقدمات نہیں لیتی تاہم ایکسپریس ٹربیون کے ذرائع اپنے موقف پر ڈٹے رہے اور کہاکہ اے کمپنی نے تحریک انصاف کو اپنی خدمات پیش کیں اور انہی کی بنیاد پر پی ٹی آئی نے عدالت میں اپنا جواب جمع کرایا، اس کمپنی نے عمران خان کے ٹیکس معاملات پر اپنا نقطہ نظر پیش کیا لیکن قانونی معاملات پی ٹی آئی کی لیگل ٹیم پر چھوڑدیئے ۔
حنیف عباسی اپنے ایک انٹرویو میں کہہ چکے ہیں کہ نوازشریف کے خلاف الزامات کی وجہ سے اُنہوں نے عمران خان پر مقدمہ کیا، دونوں پارٹیوں نے اپنے پارٹی سربراہان کے خلاف ایک ہی عدالت میں مقدمہ کررکھاہے ۔

Facebook Comments