دبئی کی ٹیکسی میں پاکستانی شہری نے بے شرمی کے ریکارڈ توڑدیئے

دبئی سٹی ( آن لائن)دبئی میں پاکستانی ٹیکسی ڈرائیور پر سفر کے دوران سیاہ شیشوں والی گاڑی میں ساتھ والی سیٹ پر براجمان گھریلوملازمہ کو جنسی طورپر ہراساں کرنے اور اس کی مرضی کے خلاف جسم کو چھونے کا الزام لگ گیا اور معاملہ عدالت پہنچ گیا۔
خلیج ٹائمز کے مطابق 29سالہ فلپائنی خاتون نے بتایاکہ اسے ابھی دبئی آئے صرف دو ہفتے ہی ہوئے تھے جب گزشتہ سال 3دسمبرکو یہ واقعہ پیش آیا، میرے کفیل کی ہدایت پر ام سقیم کے علاقے میں اس کے گھر کے باہر سے ایک ٹیکسی نے مجھے اٹھا یا اور ڈرائیور کو مجھے ایک جگہ اتارنا تھا جو زیادہ دور نہیں تھی اور بعد میں پتہ چلا کہ وہ ایک مال کے قریب عقبی علاقے میں تھا، ابھی سفر شروع ہوئے دو منٹ ہی گزرے تھے کہ ڈرائیور نے اس کے چہرے کو چھوا اور پھر جسم کے مختلف حصے ٹٹولناشروع کردیئے اور ایک ہاتھ سے گاڑی چلاناجاری رکھا، اچانک ایسی حرکت پر میں حیران رہ گئی اور چلاناشروع کردیالیکن ڈرائیور ٹس سے مس نہ ہوا۔لڑکی نے بتایاکہ کار کے شیشوں پر سیاہ پردے اور مکمل طورپر لاک تھی اور اسے کار سے اتارنے سے چند لمحے قبل ڈرائیور نے اپنے کپڑے سیدھے کرلیے ۔
مضروبہ کے 42سالہ کینیڈین کفیل نے بتایاکہ وہ اپنی فیملی کے ہمراہ ایک دوست کے گھر پر تھا اور اس نے آن لائن ٹیکسی کی خدمات حاصل کیں کہ جہاں کہیں بھی البرشہ کے علاقے میں ملازمہ کو جانا ہے ، لے جائیں ، مجھے اسے لینے جانا تھا کیونکہ ڈرائیور موقع پر پہنچ نہیں سکا لیکن تقریباً25منٹ بعد لڑکی کو چلاتے ہوئے ٹیکسی سے باہر نکلتے ہوئے دیکھ کر میں حیران رہ گیا، لڑکی کا موقف سننے کے بعد کفیل نے اس سے بات کی اور ٹیکسی کمپنی کو شکایت لگانے کی دھمکی دیدی جس پر اس نے الزام کی تردید کرتے ہوئے ٹیکسی بھگادی اور اس کے بعد البرشہ تھانے میں مقدمہ دائر کردیاگیا۔
دوران تفتیش ملزم نے اعتراف کرلیا جبکہ مزید سماعت رواں ماہ کی 23تاریخ کوہوگی۔

Facebook Comments