پولیس آن لائن سسٹم کی تنصیب تھانہ کلچر کے خاتمہ کی جانب اہم قدم ہے، پولیس کا امیج بہتر ہوگا، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سرفرازاحمد فلکی

بہاول پور(رحیم یار خان نیوز ٹیم) پولیس آن لائن سسٹم کی تنصیب تھانہ کلچر کے خاتمہ کی جانب اہم قدم ہے، پولیس کا امیج بہتر ہوگا، ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر سرفرازاحمد فلکی۔ تفصیل کے مطابق ڈسٹرکٹ پولیس آفیسر نے ڈی پی او آفس کے کمیٹی روم میں ایس ڈی پی سٹی سرکل بہاولپورراجہ غلام عباس ، ایس ڈی پی او صدر سرکل بہاول پور راؤ جمشید علی خان،تھانہ صدر بہاول پور سمیت سٹی سرکل کے تھانہ کینٹ ،تھانہ کوتوالی، تھانہ سول لائینزاور تھانہ بغدادالجدیدکے ایس ایچ اوز اور محرران سے میٹنگ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت پنجاب کا کمپیوٹر سیکشن تھانہ جات میں قائم کرنے کا مقصد محرر اور تفتیشی افسرسے کام کا دباؤ کم کرنا ہے۔ جو بھی شخص تھانہ میں اپنی کمپلینٹ لے کر آئے گاوہ سیدھا ان کے پاس آئے گا اگر تحریری درخواست ہے تو ٹھیک وگرنہ اس کا بیان وہ از خود کمپیوٹرمیں لکھیں گے اور اس کمپلینٹ کا سائل کو کوڈ نمبر دے دیا جائے گا۔ درخواست تفتیشی افسر کے حوالہ کردی جائے گی۔ جو چوبیس گھنٹے میں اس معاملہ کی انکوائری کرے گااور مزید کاروائی عمل میں لائے گا۔ انہوں نے مزید کہا کہ فرنٹ ڈیسک کے قیام سے تھانہ کلچر میں خاطر خواہ تبدیلی آئے گی اور عوام کا پولیس پر اعتماد بحال ہوگا۔ ایس ایچ اوز اور محرران کو فرنٹ ڈیسک کے عملہ سے کام کے بارے میں تعاون کرنے کی ہدایت کی۔ بعد ازاں انہوں نے صدرسرکل کے ایس ڈی پی او، ایس ایچ اوز اور ہومی سائیڈ انوسٹی گیشن یونٹ صدر سرکل کے ساتھ میٹنگ کے دوران کہا کہ ملزمان کی گرفتاریاں مکمل کرکے زیر تفتیش مقدمات کومیرٹ پر یکسو کریں۔اشتہاریوں اور مقدمات میں نامزد ملزمان کی گرفتاریوں کی رفتارکو مزید تیز کریں۔ ملزمان کو پیش عدالت کرکے قرارواقعی سزا دلوائیں۔ تفتیش کی تکمیل کے سلسلہ میں جن مقدمات میں نتیجہ کیمیکل یا کوئی اور رزلٹ بقایا ہے، کو جلد ی مکمل کروائیں۔چوری، ڈکیتی کے گینگز پکڑنے سے ہی وارداتوں میں کمی واقع ہوتی ہے۔ایس ایچ اوز خصوصی ٹیمیں تشکیل دے کر گینگز ٹریس کرکے ان سے مال مسروقہ کی برآمدگی کو یقینی بنائیں خصوصاً موٹرسائیکل چھیننے کی وارداتوں پر کنٹرول کریں اور چھینے گئے موٹرسائیکل ہر صورت برآمد کرکے متاثرین کے حوالے کئے جائیں۔ ایس ڈی پی او ز اور ایس ایچ اوز کو ہدایت دیتے ہوئے کہا کہ رمضان المبارک کے حوالے سے لگائی گئی ڈیوٹیوں کو چیک کریں اور مساجد ، امام بارگاہوں کے ساتھ ساتھ سستارمضان بازاروں اور دسترخوانوں پر سکیورٹی کے مناسب انتظامات کئے جائیں۔

Facebook Comments