وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے میگا سیوریج کی ناکامی کا سخت نوٹس لیتے ہوئے دو ہفتوں میں ذمہ داروںکا تعین کرنے اور انہیں قابل مثال سزائیں دینے کی ہدایت

رحیم یار خان (رحیم یارخان نیوز ٹیم)وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے میگا سیوریج کی ناکامی کا سخت نوٹس لیتے ہوئے دو ہفتوں میں ذمہ داروںکا تعین کرنے اور انہیں قابل مثال سزائیں دینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ متعلقہ محکموں کی لاپرواہی و کرپشن کے باعث قوم کا ڈھائی ارب میگا سیوریج میں ڈوب گیااور گذشتہ پانچ سال سے عوام اذیت کا شکار ہیں ۔انہوں نے ہدایت کی کہ میگا سیوریج اسکیم کے تعمیراتی کام میں شامل افسران کا تعین اور کنٹریکٹر کمپنی کے مالکان کا تاحیات بلیک لسٹ کرکے افسران و کنٹریکٹرز کے خلاف مفصل رپورٹ دو ہفتوں میں جمع کرائی جائے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے رحیم یار خان میں میگا سیوریج کی محرکات کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ ویڈیو لنک کانفرنس کی صدارت کرتے ہوئے کہا۔ویڈیو لنک کانفرنس میں کمشنر بہاولپور ڈویژن کیپٹن(ر)ثاقب ظفر نے بہاولپور، ڈی سی ا وکیپٹن(ر)محمد ظفر اقبال رحیم یار خان، ایم این اے میاں امتیاز احمد نے لاہور اور ایم پی اے محمد عمر جعفر نے راولپنڈی سے شرکت کی۔اس موقع پر محکمہ پبلک ہیلتھ اینڈ انجینئرنگ، انٹی کرپشن، نیسپاک سمیت دیگر اعلیٰ حکام کی جانب سے میگا سیوریج کی ناکامی اور اس میں ہونے والی تکنیکی ودیگر خامیوں پر روشنی ڈالی گئی۔ وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف نے ڈی سی ا وکیپٹن(ر)محمد ظفر اقبال کو شہریوں کو سیوریج مسائل سے چھٹکارہ دلانے کے لئے جاری اپریشن کی مکمل نگرانی کرنے اور ایم ڈی واسا کو فیصل آباد، لاہور، ملتان سے جدید مشینری و افرادی قوت فوری طور پر رحیم یار خان منتقل کرنے کی ہدایت کی۔انہوں نے ڈی سی ا وکو کہا کہ وہ اپنی زیر نگرانی ہر صورت شہر سے سیوریج کے پانی کا انخلاءیقینی بنائیں جبکہ انہوں نے صوبائی وزیر اور سیکرٹری پبلک ہیلتھ کو بھی رحیم یار خان پہنچنے کی ہدایت کی۔ڈی سی ا وکیپٹن(ر)محمد ظفر اقبال نے بتایا کہ ٹی ایم اے کا عملہ شب و روز محنت سے نکاسی و بحالی آب میں مصروف ہے اور انشاءاللہ عید سے قبل شہریوں کو واضح ریلیف فراہم کیا جائے گاجبکہ واسا فیصل آباد کے کنسلٹنٹ نے رحیم یار خان پہنچ کر کام شروع کر دیا ہے۔ایم این اے میاں امتیا ز نے ٹی ایم اے رحیم یار خان کی استعداد کار میں اضافہ کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ میگا سیوریج کی دیکھ بھال و اسے فنکشنل حالت میں رکھنے کے لئے ٹی ایم اے رحیم یار خان کے پاس مطلوبہ وسائل و افرادی قوت موجود نہیں ہے اسے فوری طور پر میونسپل کارپوریشن میں منتقل کرنے کا اعلان ناگزیر ہے جس پر وزیر اعلیٰ پنجاب نے صوبائی وزیر وسیکرٹری کے ساتھ مل کر فائنل رپورٹ ارسال کرنے کی ہدایت کی۔

Facebook Comments