پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما سابق وزیراعلیٰ و گورنر سندھ سردار ممتاز علی خان بھٹو سے میرپور بھٹو میں مختلف وفود نے ملاقاتیں کیں

صادق آباد ( نیوز رپورٹ)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے مرکزی رہنما سابق وزیراعلیٰ و گورنر سندھ سردار ممتاز علی خان بھٹو سے میرپور بھٹو میں مختلف وفود نے ملاقاتیں کیں۔ ان کے سوالات کے جواب دیتے ہوئے سردار ممتاز علی خان بھٹو نے کہاکہ ڈیڑھ سال بعد سکھ کی سانس لینے کیلئے میں فرانس، انگلینڈ اور امریکا گیا، جہاں دوستوں سے ملاقاتیں بھی کیں۔ بیرونی ممالک میں وہاں کی حکومتوں نے اپنی عوام کے لئے ملک کو جنت بنا دیا ہے اور اشیاء خرد و نوش سمیت ضرورتِ زندگی کی ہر چیز انتہائی سستے داموں میں دستیاب ہے اور عوام سکون کی زندگی گذار رہے ہیں مگر واپس ملک پہنچ کر محسوس ہوا کہ جنت سے نکل کر جہنم میں آگیا ہوں۔ یہاں کوئی سہارا دینے والا نہیں ہے، بیکار حکمرانی، رشوت خوری کی انتہا، ضروریات زندگی کی ہر چیز کی قلت، اس حد تک کہ کراچی جیسے شہر میں انتہائی شدید گرمی میں نہ پانی ہے، نہ بجلی اور نہ ہی گیس، جس کے خلاف شہری سڑکوں پر نکلے ہوئے ہیں جبکہ حکمران کہیں بھی نظر نہیں آ رہے ہیں، ان تمام مشکلات کا مرکز اندرونی سندھ میں لاڑکانہ بنا ہوا ہے، جہاں زرداریوں نے بالو کا مقام چھوڑ کر بھٹوؤں کے نام میں چھپ کر آکے اپنا مرکز بنایا ہے، یہاں نہ کوئی آئین اور نہ ہی کوئی قانون کی حکمرانی ہے، اگر ہے تو زرداری اور ان کے نوکروں اور چھاڑتوں کی ہے، باقی کسی کی نہیں سنی جاتی، بالخصوص پولیس اس سلسلے میں دیگر محکموں سے کافی آگی نکلی ہوئی ہے اور زرداریوں کے نوکروں کے کہنے پر مدعی جیلوں میں پڑے ہیں اور چور سرے عام گھوم رہے ہیں ایسی صورتحال میں عوام بے یارو مددگار سخت پریشانی میں مبتلا ہے، دوسری جانب پولیس کے بلبوتے پر منتخب ہونے والے نمائندے اور وزراء ملک کے بادشاہ بنے ہوئے ہیں، وہ لوٹ مار اور عیاشی میں اتنے تو غرق ہو چکے ہیں جو یہ بات بھول چکے ہیں کہ کل بھی ہوگا۔ تاریخ بتا رہی ہے کہ ایسے حالات دیگر ممالک میں بھی پیدا ہوئے تھے، جس پر عوام سڑکوں پر نکل آیا اور ظالموں اور حرام خوروں کو درختوں میں لٹکا کر حقیقی جمہوریت اور حکمرانی قائم کی، جہاں اب وہ سکون سے سکھ کی سانس لے رہے ہیں، مگر اس بات پر کوئی حیرت نہیں ہے کہ رشوت خوری اور لاقانونیت کے بدبوء جاکر آسمان سے ٹکرائی ہے، مگر ملک میں رشوت خوری کے روکتھام کے ادارے دور دور تک نظر نہیں آ رہے، حال ہی میں پاناما لیکس معاملے نے دنیا بھر میں ہلچل مچا دی ہے اور یہاں یہ معاملہ مجرموں کے حوالے کیا گیا ہے، جو اس کو طول دیکر بلا آخر دفن کر دیں گے، اس قسم کا تجربہ پہلے والی کرپشن اور غیر ملکی بینک اکاؤنٹس پر شور مچایا گیا مگر وہ بھی سحر ا میں پانی کی طرح سوکھ کر صاف ہوگیا، اسی طرح پاناما لیکس کا بھی وہ ہی حشر ہوگا اور ملک کی عوام صرف منہ پھاڑے دیکھتی ہی رہے گی۔ ممتاز علی بھٹو نے مزید کہا کہ عید الفطر کے بعد سابقہ سندھ نیشنل فرنٹ کی سینٹرل کمیٹی کا اجلاس طلب کیا جائے گا جس میں آئندہ کے لائحہ عمل کا اعلان کیا جائے گا۔

Facebook Comments